20 رمضان کے بعد کرفیو میں نرمی برقرار رہے گی؟

سعودی وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے واضح کیاکہ نئے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے مقررہ حفاظتی اقدامات کا مستقل بنیادوں پر جائزہ لیا جارہاہے. نئی صورتحال کے تناظر میں فیصلے ہوں گے.

اخبار 24 کے مطابق نئے کورونا وائرس سے متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافے نے سعودی شہریوں اور مقیم غیرملکیوں کے حلقوں میں گردش کر رہا ہے کیا تیرہ مئی (20 رمضان) کے بعد مملکت بھر میں لاک ڈاؤن کردیا جائے گا؟.

ریاض میں پریس کانفرنس کے دوران ترجمانالعبد العالی نے کرفیو میں توسیع اور تخفیف کی حکمت عملی کے حوالے سے بتایا کہ ہمیں یہ سمجھنا چاہئے کہ کرفیو میں تخفیف یا توسیع کا فیصلہ کورونا وائرس کے مریضوں میں اضافے کی بنیاد پر نہیں کیا جارہا تھا.
ترجمان کے مطابق کرفیو میں توسیع کا فیصلہ اس بنیاد پر کیا جاتا ہے کہ مہلک وائرس کس شکل میں کہاں اور کس انداز سے پھیل رہا ہے. وائرس کے پھیلنے کی رفتار کیا ہے. متاثرین کی صحت پر وائرس کس حد تک اثر انداز ہورہا ہے. وائرس سے کتنے لوگ صحت یاب ہورہے ہیں اور اس سے کتنی ہلاکتیں ہورہی ہیں. وائرس سے بچاؤ کے لیے حفاظتی اقدامات کی پابندی کس حد تک کی جارہی ہے.
العبد العالی نے مزید کہاکہ ان تمام امور کو پیش نظررکھ کر ہی فیصلہ ہوگا کہ 20 رمضان کے بعد کرفیو میں تخفیف کا سلسلہ جاری رکھا جائے یا مملکت میں مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا جائے.

جواب دیجئے