سعودی عرب میں زیادہ تر خواتین کو وراثت میں حصہ نہیں دیا جا رہا

انسانی حقوق کونسل کے مطابق خاندانی دباؤ کی وجہ سے خواتین اپنے وراثتی حق سے دستبردار ہو جاتی ہیں

سعودی عرب میں زیادہ تر خواتین کو وراثت میں حصہ نہیں دیا جا رہا
سعودی عرب میں زیادہ تر خواتین کو وراثت میں حصہ نہیں دیا جا رہا

العربیہ نیوز کے مطابق العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق انسانی حقوق کونسل کا کہنا ہے کہ خواتین پر تشدد، انہیں وراثت سے محروم کرنے اور ان کے دیگر بنیادی حقوق سے محروم کرنے کے واقعات کے ضمن میں دائر متعدد درخواستوں کی چھان بین جاری ہے۔
انسانی حقوق کونسل کا کہنا ہے کہ ماضی میں خواتین بعض وجوہ کی بنا پر وراثت میں اپنا حق مانگنے سے گریز کرتی رہی ہیں۔

ان وجوہات میں لڑکیوں کو ان کے خاندانوں کی طرف سے سماجی دباو یا خاندان کے ساتھ تعلقات خراب ہونے کا اندیشہ رہا ہے۔ ایک سبب خواتین کا وراثت میں شرعی حقوق کے حوالے سے آگاہ نہ ہونا بھی ہے۔ سعودی عرب میں خواتین کے حقوق بالخصوص ان کے وراثت میں حق کے حوالے سے موثر قوانین موجود ہیں۔ادھر سعودی عرب میں انسانی حقوق کونسل کی رکن ڈاکٹر آمال الھبدان نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خواتین کو ان کے موروثی حقوق سے محروم رکھنا ایک جرم ہے اور سعودی عرب میں ایسے جرم کی کوئی گنجائش نہیں۔