'ذاتی زندگی میں ڈری سہمی نہیں، پر اعتماد لڑکی ہوں'

'ذاتی زندگی میں ڈری سہمی نہیں، پر اعتماد لڑکی ہوں'

حال ہی میں اختتام پذیر ہونے والے ڈرامہ سیریل ’تڑپ’ میں مرکزی کردار ادا کرنے والی اداکارہ حبا بخاری کہتی ہیں کہ کسی بھی کردار کو کرنے سے

پہلے سکرپٹ کو بار بار پڑھتی ہیں کہ ہر سین ان کی نظروں کے سامنے آجاتا ہے اور ان کے لیے وہ کردار نبھانا آسان ہو جاتا ہے۔

’ایسے کردار جو خود دیکھنا پسند ہوں انہی کو قبول کرتی ہوں اور ایسے کردار جو بطور سامعین مجھے خود دیکھنا پسند نہ ہوں، انہیں رد کردیتی ہوں۔‘


حبا بخاری کا کہنا ہے کہ وہ کچھ عرصہ تھیٹر میں بھی کام کر چکی ہیں جہاں انہیں اداکاری کے رموز و اوقاف سیکھنے کا موقع ملا۔


’تھیٹر میں کام کرنے کا انداز مختلف دیکھا، چھ چھ ماہ ریہرسلز ہوتی دیکھیں، اچھی بات یہ ہے کہ یہاں کام کا ریسپانس ساتھ ساتھ ملتا ہے جب پوری کاسٹ

سامعین کے سامنے کھڑی ہوتی ہے تو ان کی تالیوں کی گونج بتاتی ہے کہ اداکاروں کی چھ ماہ کی محنت کتنی رنگ لائی۔‘

حبا بخاری کو لوگوں سے شکایت ہے کہ وہ ’افیئرز‘ اور طلاق والے ڈراموں کو خود ریٹنگ دیتے ہیں تو مجبوراً پروڈیوسرز کو ایسے ہی ڈرامے بنانے پڑتے

ہیں، اگر کلاسک ڈرامہ بنا کر رکھ دیا جائے تو لوگ بور ہوجائیں گے۔


’ارطغرل کو لوگوں نے اس لیے دیکھا کیونکہ وہ باہر سے بن کر آیا تھا اگر یہاں بنا ہوتا تو لوگ یقیناً کہتے کہ یہ کیا بنایا ہے۔‘